— اے ایف پی/فائل
— اے ایف پی/فائل

کراچی: 21 اکتوبر کو ختم ہونے والے ہفتے کے دوران 29 اشیائے ضروریہ بشمول ٹماٹر، سرسوں کا تیل، سبزی گھی، آلو، کوکنگ آئل وغیرہ کی قیمتوں میں اضافہ ہوا۔

حساس قیمت اشاریہ (SPI) کی بنیاد پر، مشترکہ آمدنی والے گروپ کے لیے ہفتہ وار افراط زر میں 1.38 فیصد کا اضافہ ریکارڈ کیا گیا جو 14 اکتوبر کو ختم ہونے والے ہفتے کے دوران 159.26 پوائنٹس سے بڑھ کر زیرِ جائزہ ہفتے میں 161.46 پوائنٹس تک پہنچ گیا۔

پاکستان بیورو آف سٹیٹسٹکس (پی بی ایس) کے مطابق چکن، گندم کے آٹے اور پیاز سمیت 7 اشیاء کی قیمتوں میں کمی ہوئی۔ دریں اثناء 15 اشیائے ضروریہ کی قیمتوں میں کوئی تبدیلی نہیں کی گئی۔

بیورو نے اپنی ہفتہ وار رپورٹ میں کہا کہ کھانے پینے کی اشیاء میں ٹماٹر کی قیمت میں 41.63 فیصد کا نمایاں اضافہ ہوا۔ دریں اثنا، سرسوں کے تیل، خوردنی گھی، روٹی سادہ، آلو اور کوکنگ آئل (5 لیٹر) کی قیمتوں میں 2.23 فیصد، 1.91 فیصد، 1.84 فیصد، 1.57 فیصد اور 1.50 فیصد اضافہ ریکارڈ کیا گیا۔

غیر غذائی اشیاء میں ڈیزل، پیٹرول، ایل پی جی کی قیمتوں میں 10.06 فیصد، 8.19 فیصد اور 7.11 فیصد اضافہ ہوا۔

زیر جائزہ ہفتے کے دوران چکن کی قیمت میں 2.45 فیصد کمی ہوئی جبکہ مونگ، پیاز اور گندم کے آٹے کی قیمتوں میں 1.09 فیصد، 0.78 فیصد اور 0.18 فیصد کی کمی ریکارڈ کی گئی۔

سب سے کم آمدنی والے گروپ کے لیے SPI میں پچھلے ہفتے کے مقابلے میں 0.96% اضافہ ہوا۔ گروپ کا انڈیکس گزشتہ ہفتے 170.22 پوائنٹس کے مقابلے 171.85 پوائنٹس پر رہا۔

سال بہ سال کی بنیاد پر، ایس پی آئی پر مبنی افراط زر میں 14.48 فیصد اضافہ ہوا۔



Source link

Leave a Reply