وہاڑی کے نواحی علاقہ لڈن میں پولیس کی بڑھتے ہوئی غنڈہ گردی

سہیل شیخ کے روپ میں ایک اور صلاح الدین…
تھانہ لڈن کا ایس ایچ او عارف شاہ ، سب انسپکٹر طاہر اورراومنور نے سہیل شیخ کو اٹھا کر لے گئے اور تین دن خفیہ مقام رکھ کر تشدد کی انتہا کردی، جب اس کی حالت غیر ہو گئی تو اس کو وہاڑی میں ڈاکٹر طارق کے پاس لے گئے ڈاکٹر طارق نے لڑکے کی حالت کو تشویشناک قرار دیتے ہوئے اس کو فوراً ملتان نشتر لے جانے کا کہا، اب پولیس تھانہ لڈن کے چند اہل کار اس کو ملتان کے کسی پرائیویٹ ہسپتال میں لے کر بیٹھے ہیں اور سننے میں یہ آ رہا کہ پولیس تشدد سے مریض رینل فیلئیر ( گردے فیل ہوجانا) میں جا چکا ہے، اور ڈاکٹرز نے گردوں کے لیے ڈائیلسز کا کہا ہے،
جبکہ دوسرے واقعہ میں تھانہ لڈن کے ایس ایچ او ،عارف شاہ، سب انسپکٹر طاہر منور اور پورے عملے کی سفاکیت عروج پر، ایک لڑکے پر بدترین تشدد، خواتین کو طاہر نامی سب انسپکٹر نےبالوں سے گھسیٹتے ہوئے پولیس کے ڈالے میں ڈال کر نا معلوم مقام پر منتقل کر دیا.
ہمارے قومی لیڈر کپتان پنجاب پولیس کی جانب غور فرمائیں
سب انسپکٹر تھانہ لڈن نے غلام نبی لڑکے کو، تشدد کر کے کوٹ پل پر ڈالے سے اتار دیا، خواتین کو ڈالے میں ڈال کر گشت کے بہانے سڑکوں پر پھرتا دیکھا گیا

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here