اسلام آباد: پاکستان میں ہفتہ کو وزیر اعظم عمران خان کی منظوری کے بعد جلد سول ڈرون اتھارٹی کا قیام نظر آئے گا۔

اتھارٹی ملک میں بغیر پائلٹ کے تمام طیاروں کو کنٹرول اور کنٹرول کرے گی اور اس شعبے کی مزید ترقی کے لئے ایک اداراتی میکانزم بنائے گی۔

اتھارٹی کو لائسنسنگ ، درآمد ، مینوفیکچرنگ ، جانچ اور ڈرون اجازت نامے کے اجراء کے بارے میں فیصلہ کرنے کا اختیار دیا جائے گا۔ یہ لائسنس اور رجسٹریشن کی منسوخی سمیت جرمانے اور جرمانے بھی عائد کرے گا ، اور اگر ضرورت ہو تو مروجہ شہری اور فوجداری قوانین کے تحت قانونی کارروائی کا آغاز کرے گی۔

اس طرح کے ہوائی جہاز کی تیاری ، کام ، تربیت اور تحقیق اور ترقی کے معیار تیار کرے گا۔

صنعتی شعبے کو گھریلو مینوفیکچرنگ کی سہولت کے لئے تکنیکی رہنمائی بھی اتھارٹی کے ذریعہ فراہم کی جائے گی۔

سیکرٹری ہوا بازی ڈویژن کی سربراہی میں ، اتھارٹی کی تشکیل میں پی اے ایف ، شہری ہوا بازی ، دفاعی پیداوار ، داخلہ اور وزارت سائنس و ٹیکنالوجی کی سینئر سطح کی نمائندگی شامل ہے۔

اس میں آزاد جموں و کشمیر اور گلگت بلتستان سمیت فیڈریٹنگ یونٹوں کے ہر نمائندے بھی شامل ہیں۔

اس شعبے کے تین نامور ماہرین بھی اتھارٹی کے ممبر ہوں گے۔

‘وقت کی ضرورت’

وزیر اعظم عمران خان نے اپنے ریمارکس میں کہا ہے کہ تجارتی ، تحقیق اور ترقی ، زرعی اور دیگر پرامن مقاصد کے لئے ڈرون ٹکنالوجی کا استعمال “وقت کی ضرورت” ہے۔

انہوں نے مشاہدہ کیا کہ ڈرون اتھارٹی کا قیام نہ صرف اس اہم شعبے کو ریگولیٹ کرنے کے لئے قوانین کی عدم فراہمی کی وجہ سے موجودہ خلا کو پُر کرے گا بلکہ اس نازک ٹکنالوجی کے فروغ اور گھریلو پیداوار میں بھی مددگار ثابت ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ مختلف شعبوں میں ڈرون ٹیکنالوجی کے موثر استعمال سے وسائل کی اصلاح اور بہتر خدمات کی فراہمی میں مدد ملے گی۔

وزیر اعظم نے ہدایت کی ہے کہ اتھارٹی کے قیام کے لئے قانون سازی کا عمل ترجیحی بنیاد پر مکمل کیا جائے۔

یہ کابینہ کی منظوری کے بعد پارلیمنٹ میں پیش کی جائے گی۔

‘ایک اور سنگ میل حاصل’

اس ترقی کی بات کرتے ہوئے ، وزیر سائنس وٹیکنالوجی فواد چوہدری نے کہا کہ یہ اختیار “ایک اور اہم سنگ میل” ہے۔

انہوں نے کہا کہ اس کی توجہ زراعت کے ڈرون اور پولیس ڈرون پر مرکوز ہے اور اس نے ایک “ڈس ایپریپٹو ٹکنالوجی اتھارٹی” کے قیام کے اقدام کی بات کی جس سے پاکستان میں تھری ڈی پرنٹرز اور ایک مکمل روبوٹکس انڈسٹری کی راہ ہموار ہوگی۔



Source link

Leave a Reply