حاصل پور:زبردستی اغوا کرنے کی کوشش کے دوران مزاحمت پر لڑکی کو پسٹل سےناک پر زرب زخمی کر دیا گیا،متاثرین خوار پولیس کارروائی سے گریزاں، ملزم بااثر،قتل کرنے کی دھمکیاں

ہر تھانے میں فوٹو سیشن کی حد تک تو کارروائی ہوتی نظر آتی ہے پریکٹیکل نہیں نہ جانے کتنے مظلوم انصاف کے متلاشی ایسی ہی مثال تھانہ حاصلپور سٹی کی ہے مظلوم حق نواز کی بیٹی عمارہ بی بی کےساتھ غنڈا گردی کی انتہا دیکھیں کہ غریبوں کے گھر میں گھس کے ظالمانہ تشدد کیا اور عمارہ بی بی کو اٹھانے کی کوشش کی ناکامی پر عمارہ بی بی کے ناک پر پسٹل کا بٹ مارا جس کے نتیجہ میں اس کی ناک کی ہڈی ٹوٹ گئی کئی دن تھانے اور ہسپتال کے چکر لگا لگا کر میڈیکل تو بنوا لیا پھر ایف آئی آر نہیں ہو رہی تھی پھر کئی امتحانوں سے گزرنے کے بعد ایف آئی آر درج ہوئی ایف آئی آر درج ہوگئی مگرابھی تک نامزدملزم راشد کو مختلف حیلے بہانوں سے بچانے کی کوشش کی جارہی ہے ملزم راشد کی طرف سے مجھے اور میرے والد کو گھر پہ آکے دھمکیاں دی جارہی ہیں کہ اپنا کیس واپس لے لو ورنہ جان سے ہاتھ دھو بیٹھو گے پہلے تم نے ہمارا کیا کر لیا ہے جواب کرلو گے اگر کیس واپس نہ لیا تو پہلے سے بھیانک حال ہوگا ملزم بااثر ہونے کی وجہ سے ہماری کہیں شنوائی نہیں ہورہی کیا اس ملک میں امیروں کے لئے کوئی قانون نہیں وہ غریبوں کو اور غریبوں کی بچیوں کو جہاں چاہیں جب چاہیں رسوا کر دیں کوئی پوچھنے والا نہیں ہم نےان درندوں کے ڈر سے لوگوں کے گھروں میں پناہ لی ہوئی ہے ہمیں ان سے خطرہ ہے کہیں یہ ہمیں جان سے نہ مار دیں اگر اس ملک میں کوئی غریبوں کی بھی سننے والا ہے تو میں ہاتھ باندھ کر عرض کرتی ہوں کہ مجھ پر ظلم کے پہاڑ توڑنے والا راشد اور اس کے ساتھیوں کو کیفر کردار تک پہنچائیں اور انہیں گرفتار کر کے پابند سلاسل کیا جائے میری وزیر اعلی پنجاب ،آئی جی پنجاب ،آر پی او بہاولپور اور ڈی پی او بہاولپور سےاپیل ہے کہ میرے ساتھ ہونے والی نااںصافی پر مجھے انصاف فراہم کی جائے

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here