مبینہ طور پر گذشتہ 13 ماہ کے دوران 125 سے زیادہ خواتین نے خطے میں غربت ، معاشرتی عدم مساوات اور دیگر مسائل کی وجہ سے اپنی جانیں لیں۔ جیو نیوز اتوار کو اطلاع دی۔

مٹھی میں ایک ورکشاپ کا انعقاد کیا گیا جس میں ماہرین نفسیات ، سول سوسائٹی ، اور غیر سرکاری تنظیموں نے حصہ لیا۔

ورکشاپ میں تھرپارکر ضلع میں خواتین کو اپنی جانیں لینے پر مجبور ہونے والے بڑھتے ہوئے رجحان سے متعلق وجوہات اور پریشانیوں پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

ورکشاپ کے ایک شریک نے بتایا کہ گذشتہ ایک سال کے دوران 100 سے زیادہ خواتین اپنی جانیں لے چکی ہیں۔

ورکشاپ میں یہ بات زیر بحث لائی گئی کہ تھرپارکر کے عوام خصوصا خواتین اور بچے نہ صرف مختلف بیماریوں سے اپنی جانیں گنوا رہے ہیں بلکہ غربت اور رواج بھی نوجوان خواتین کو اپنی جانیں لینے پر مجبور کررہے ہیں۔



Source link

Leave a Reply