بورےوالا حکومتی احکامات کی کھلی خلاف ورزی نے بھٹہ مزدوروں کے چولہے ٹھنڈے کر رکھے ہیں۔ طے شدہ اجرت نہ ملنے کے باعث بھٹہ مزدور انتہائی کسمپرسی کی زندگی گزارنے پر مجبور ہیں۔ ان خیالات کا اظہار جنرل سیکرٹری بھٹہ مزدور یونین پاکستان محمد شبیر نے لیبر ڈیپارٹمنٹ وہاڑی میں منعقدہ اجلاس میں خطاب کرتے ہوئے کیا۔اس موقع پر پاکستان ورکرز کنفیڈریشن کے رہنماء نیاز خان ، یونائیٹڈ ٹریڈ یونین کے رہنماء سید امتیاز ، سینئر نائب صدر بھٹہ مزدور یونین بورےوالا حافظ محمد عثمان اور ضلعی صدر محمد اکمل سمیت بھٹہ مزدوروں کی بڑی تعداد بھی موجود تھی۔ حافظ محمد عثمان اور دیگر مقررین کا خطاب کرتے ہوئے کہنا تھا کہ علاج معالجہ ، پینے کے صاف پانی ، رہائش سمیت دیگر بنیادی سہولیات کی عدم فراہمی نے بھٹہ مزدوروں کو جانوروں جیسی زندگی گزارنے پر مجبور کر رکھا ہے۔ حکومتی پالیسیوں پر عمل درآمد کا نہ ہونا مزدوروں میں حکومت کے لیے بے یقینی کی کیفیت پیدا کر رہا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ مزدورں کو اجرت میں تاخیر یا عدم ادائیگی جیسی بدمعاشی کا بھی سامنا ہے۔ اصرار کرنے پر ناجائز مقدمات میں ملوث کر دیا جاتا ہے اور سوشل سکیورٹی کارڈز بھی نہیں بنوائے جا رہے۔ اس موقع پر مزدورں نے حکومت وقت سے اقدامات کا مطالبہ بھی کیا ہے۔۔۔۔

Leave a Reply